سینیٹر فاروق ایچ نائیک—فائل فوٹو

پیپلز پارٹی کے سینیٹر فاروق ایچ نائیک کی سربراہی میں سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خارجہ امور کا آخری اجلاس منعقد ہوا۔

فارق ایچ نائیک نے خارجہ امور کے افسران اور کمیٹی ممبران کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ یہ کمیٹی کی آخری میٹنگ ہے۔

اس موقع پر سیکریٹری خارجہ نے کمیٹی کو بتایا کہ یاسین ملک کی اہلیہ مشعال ملک کو پاکستانی پاسپورٹ جاری کیا گیا ہے، عالمی سطح پر جموں کشمیر میں جاری بربریت سے متعلق دنیا کو آگاہ کیا ہے۔

انہوں نے کمیٹی کو بتایا کہ دوحہ فورم میں اس بار افغانستان نے شرکت نہیں کی، ہم نے افغانستان کو کہا ہے کہ وہ کم از کم پاکستان میں دہشت گردی کی مذمت کیا کرے۔

سیکریٹری خارجہ نے بتایا کہ اس بار جو آخری واقعہ ہوا افغانستان نے اس کی مذمت کی ہے، افغانستان میں امن ہو گا تو پاکستان میں امن ہو گا، افغانستان کے ساتھ روابط جاری ہیں اور میٹنگز ہوتی رہتی ہیں۔

انہوں نے مزید بتایا کہ دہشت گردی کے تدارک کے لیے افغانستان سے بات چیت ہوتی ہے، ہم ڈی جی ایم او کے ذریعے افغانستان سے بات کرتے ہیں، افغانستان کی جانب سے ملا شیریں اور ان کے ڈی جی ایم او کا نمائندہ ہوتا ہے۔

سیکریٹری خارجہ کا یہ بھی کہنا ہے کہ افغانستان کو بتایا گیا ہے کہ کوئی دہشت گردی ہوتی ہے تو کم از کم مذمت کی جائے، 5 لاکھ افغان مہاجرین کی واپسی مکمل ہو چکی ہے۔



Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *