سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ عمران خان کی نااہلی کو خوشی کی بات نہیں سمجھتا ہوں۔

جیو نیوز کے پروگرام ’آج شاہزیب خانزادہ میں گفتگو‘ کے دوران شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ وزیراعظم ہوتے ہوئے غلط بیانی کرنا اور حقائق چھپانا خوشی کی بات نہیں۔

انہوں نے کہا کہ جو دوسروں پر کرپشن کے الزامات لگاتا تھا وہ آج خود کرپٹ ثابت ہوا، اب امتحان اعلیٰ عدلیہ کا ہے۔

ن لیگی رہنما نے مزید کہا کہ سپریم کورٹ نے ایک وزیراعظم کو بہت کم چارجز پر ڈی سیٹ کیا تھا، سپریم کورٹ نے ٹرائل کورٹ بن کر حکومت توڑی اور نوازشریف کو نااہل کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ عمران خان نے الیکشن کمیشن کو گمراہ کیا اور جھوٹ بولا، انصاف کا نظام ایک ہوتا ہے، نواز شریف کےلیے ایک اور عمران خان کےلیے دوسرا نظام انصاف نہیں ہوسکتا۔

شاہد خاقان عباسی نے یہ بھی کہا کہ آج سب سے بڑا امتحان سپریم کورٹ کا ہے کہ وہ کیا فیصلے کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آپ ملک کو غیر مستحکم کر رہے ہیں، تو اپنی ذات کےلیے کر رہے ہیں، یہ بات آگے بڑھے گی، بات یہاں رکے گی نہیں۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ عمران خان کے پاس جو پیسے آئے تھے کہاں خرچ کیے؟ کیوں چھپائے؟ توشہ خانہ میں جو پیسے جمع کرائے وہ کہاں سے آئے؟ کیا آپ کی آمدن تھی۔

ان کا کہنا تھا کہ عمران خان نے مخالفین کو بغیر مقدمہ بنائے جیل میں ڈالا۔

ن لیگی رہنما نے کہا کہ لوگوں کے اکاؤنٹ میں کروڑوں روپے آئے، کوئی پوچھنے والا نہیں، حکومت نے شائستگی سے معاملے کو نمٹایا ہے۔



Leave a Reply

Your email address will not be published.