سابق وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا ہے کہ ہمارا گروتھ ماڈل الٹا ہے، ایک فیصد لوگ ملک کو کنٹرول کر رہے ہیں۔

کراچی میں تقریب سے خطاب میں مفتاح اسماعیل نے کہا کہ ملک میں 2 بلین ڈالرز کے موبائل فونز آتے ہیں جبکہ ہماری ٹوٹل ایکسپورٹ 30 بلین ڈالر ہے۔

انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی دور کے وزیر خزانہ شوکت ترین کے آئی ایم ایف سے کیے گئے معاہدے میں ہم نے بہتری کی کوشش کی۔

سابق وزیر خزانہ نے مزید کہا کہ جب وزارت کا قلمدان سنبھالا تو زرمبادلہ کے ذخائر 10 ارب ڈالر تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ 5 ماہ میں وفاقی وزیر خزانہ رہا اور اتنے ہی ماہ جیل میں بھی رہ چکا ہوں۔

مفتاح اسماعیل نے یہ بھی کہا کہ ایک فیصد افراد ملک کو کنٹرول کر رہے ہیں، یہاں امیر ترین 570 افراد کو 1 فیصد کی شرح پر قرض دیا جاتا ہے۔



Leave a Reply

Your email address will not be published.