فائل فوٹو

دفاعی تجزیہ کار جنرل (ر) رضا خان نے کہا ہے کہ پاک فوج کو علم ہے کہ پاکستان کی خدمت کیسے کرنی ہے۔

جیو نیوز سے گفتگو میں جنرل (ر) رضا خان نے کہا کہ پارٹی لیڈر کے اس بیان سے مسلح افواج کے افسران کو سخت تشویش ہوئی ہے، انہیں اپنا بیان واپس لینا چاہیے اور اس پر معافی مانگنی چاہیے۔

اُن کا کہنا تھا کہ ایسے بیانات کا مطلب ہے پارٹی لیڈر شاید جمہوری روایات کو نہیں مانتے ہیں، دنیا میں کہیں اپنی افواج پر سازش کا الزام نہیں لگایا جاتا۔

جنرل (ر) رضا خان نے مزید کہا کہ اس وقت اس طرح کے بیانات فوج کے مورال پر براہ راست اثر ڈالیں گے۔

دفاعی تجزیہ کار نے یہ بھی کہا کہ بیان واپس لینے کے لیے ان کے فالوورز کو اپنی لیڈرشپ پر دباؤ ڈالنا چاہیے۔

اُنہوں نے کہا کہ تحریک عدم اعتماد جمہوری عمل اور روایات کا حصہ ہے، جس کی کامیابی کے بعد سے ہی فوج کےخلاف باتیں شروع کی گئیں۔

جنرل (ر) رضا خان نے کہا کہ افواج پاکستان کا عہد ہوتا ہے کہ وہ ریاست اور آئین کے وفادار ہوتے ہیں، جو بھی حکومت ہوتی ہے اس کو فوج سپورٹ کرتی ہے۔

اُن کا کہنا تھا کہ آرمی میں 9 کور کمانڈر ہوتے ہیں، سب نے 38 ،37 سال ایمانداری کے ساتھ پاکستان کی خدمت کی ہوتی ہے، انہیں پتا ہے کہ پاکستان کی خدمت کیسے کرنی ہے۔



Leave a Reply

Your email address will not be published.